پشاور بی آر ٹی ملازمین نے احتجاج کرتے ہوئے تمام سٹیشنز ہی بند کر دیئے، وجہ کیا تھی؟ حیران کن خبر آ گئی

بس ریپڈ ٹرانزٹ (بی آر ٹی)کے ملازمین نے تنخواہوں میں کٹوتی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے تمام سٹیشنز کو بند کر دیا جسکی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، احتجاج کرنیوالے ملازمین کا کہنا تھا کہ ہماری تنخواہوں سے پانچ ہزار سے لے کر دس ہزار روپے کٹوتی کی گئی ہے جو سراسر ظلم ہے، ملازمین نے احتجاج کے طور پر تمام سٹیشنز بند کر دئے جسکے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ سٹیشنز جانے والے شہریوں کے کارڈز سے بھی 50روپے کٹوتی کی گئی ۔

ملازمین نے ایک گھنٹہ تک احتجاج کے بعد ہڑتال کی کال واپس لے لی اور بی ار ٹی سروس بحال کر دی گئی تاہم اس حوالے سے بی آر ٹی ترجمان نے موقف دیتے ہوئے کہا کہ ہڑتال کرنے والے نجی کمپنی کے ملازمین ہیں جبکہ بی آر ٹی کا نجی کمپنی کے معاملات سے براہ راست کوئی تعلق نہیں،بی آر ٹی کی جانب سے کنٹریکٹ کی مکمل پاسداری کو یقینی بنایا جا رہا ہے، ہڑتال کرنے والے ملازمین میں سیکورٹی گارڈ، ٹکٹنگ اور دیگر عملہ شامل تھا جن کا موقف تھا کہ ان سے تنخواہوں میں ہر ماہ 3 ہزار سے 5 ہزار روپے کٹوتی کی جاتی ہے

بعد ازاں ملازمین نے ہڑتال کی کال واپس لے لی جس کے بعد سروس بحال ہوگئی ہے اور شہریوں کو بلا تعطل سفری سہولت دینا ادارے کی اولین ترجیح ہے ترجمان ٹرانس پشاور نے بتایا کہ بی آر ٹی کی جانب سے کنٹریکٹ کی پاسداری کو یقینی بنایا جارہا ہے۔