لاپتہ ہونے والا انڈونیشیا کا مسافر طیارہ سمندر میں گر تباہ، 50 سے زائد افراد جان سے گئے

انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ میں پرواز کے فوری بعد لاپتہ ہونے والا طیارہ سمندر میں گرکر تباہ ہوگیا جس سے طیارے میں موجود 50 افراد جان کی بازی ہار گئے ،حادثے میں مزید ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جارہاہے،بدقسمت طیارے میں کریو ممبران سمیت 62 لوگ سوار تھے۔ طیارے کا رابطہ کنٹرول ٹاور سے  پرواز کے چار منٹ کے بعد ہی منقطع ہوگیا تھا۔

اے آر وائی نیوز کے  مطابق انڈونیشیا کا مسافر طیارہ 737 جکارتہ سے انڈونیشیا کےشہر کونٹی یانک جارہا تھا کہ اڑان بھڑنے کے چار منٹ بعد اچانک اس کا کنٹرول ٹاور سے رابطہ منقطع ہوگیا، طیارے میں 10 بچوں سمیت 50افراد سوار تھے جبکہ طیارے میں کریو کے 12 لوگ بھی شامل تھے۔

 کوسٹ گارڈ جہاز کے ایک کپتان نے پانی میں طیارے کا ملبہ اور مسافروں کی لاشیں دیکھیں جنہوں نے سمندر میں طیارے کا ملبہ دیکھے جانے کی بروقت اطلاع اعلی حکام کو دی۔طیارے کا کنٹرول ٹاور سے رابطہ دس ہزار فٹ کی بلندی پر پہنچنے کے بعد منقطع ہوا۔ لاپتہ ہونے والا طیارہ 27 سال پرانا ہے، اس نے اپنی پہلی پرواز 1994 میں کی تھی۔پاکستانی دفتر خارجہ کی جانب سے طیارہ حادثہ پر افسوس کا اظہار کیا گیا ہے۔