لاہور کے نئے سی سی پی او غلام محمود ڈوگر کون ہیں ؟وہ تفصیلات جو لاہور کے شہری جاننا چاہتے ہیں

لاہور پنجاب حکومت نے جرائم کی شرح بڑھنے اور تنازعات کا پہاڑ کھڑا ہونے کے بعد عمر شیخ کو  کیپٹل سٹی پولیس آفیسر(سی سی پی او ) کے عہدے سے ہٹاتے ہوئے غلام محمود ڈوگر کو لاہور پولیس کا نیا سربراہ مقرر کر دیاہے،غلام محمود ڈوگرانتہائی تجربہ کار سمجھے جانے کے ساتھ ساتھ اچھی شہرت کے مالک بھی ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں تعینات ہونے والے سی سی پی او  غلام محمود ڈوگر جرائم روکنے میں بے مثال کردار رکھتے ہیں جبکہ وہ اس سے قبل لاہور میں مختلف عہدوں پر خدمات انجام دے چکے ہیں جس کے باعث وہ لاہور پولیس کے مزاج اور محکمے کو بہت اچھی طرح سمجھتے ہیں ۔غلام محمود ڈوگر اس سے قبل لاہور میں ایس پی ایڈمن ، چیف ٹریفک آفیسر اور ڈی آئی جی آپریشن کے عہدوں پر فرائض سر انجام دے چکے ہیں جبکہ ان کا تمام عہدوں پر ٹریک ریکارڈ بھی اچھا ہے ۔

غلام محمود ڈوگر لاہور میں حالیہ تعیناتی سے بیشتر  گوجرانوالہ اور ملتان میں بطور سی پی او بھی بہترین کارکردگی دکھانے کا تجربہ رکھتے ہیں ، اُنہوں نے بطور آر پی او ساہیوال اور فیصل آباد میں جرائم پیشہ افراد کو مضبوط نکیل ڈالے رکھی،سی سی پی او  لاہور تعیناتی سے قبل وہ ڈی آئی جی پری کیور منٹ اینڈ آئی ٹی فرائض انجام دے رہے تھے ۔حکومت پنجاب کی جانب سے عمر شیخ کو تبدیل کرنے کا سال کا پہلا بڑا فیصلہ سامنے آنے کی وجہ صوبائی دارالحکومت میں بڑھتی ہوئی جرائم کی شرح اور پولیس افسران کی آپسی چپقلش تھی جسکی وجہ سے حکومت کو شدید تنقید کا بھی سامنا تھا جبکہ سینئر پولیس افسران کی آپسی چپقلش پولیس کا مورال بھی گرا رہی تھی ۔عمر شیخ تقریبا تین ماہ لاہور کے سی سی پی او تعینات رہے جس دوران کوئی افسر لاہور میں اپنی تعیناتی کروانے کیلئے تیار نہیں تھا تاہم جن افسران کو عمر شیخ لاہور میں لائے اِن پر بعدازاں کرپشن کے چارجز بھی سامنے آئے ۔

سی سی پی او کے خلاف درخواستوں پر آئی جی پنجاب انعام غنی براہ راست انکوائری کر رہےتھےلیکن ابھی اس کا کوئی نتیجہ سامنے نہیں آیا تھاکہ اُن کا  تبادلہ کر دیا گیا ۔دو روز قبل عدالت نے بھی سی سی پی او لاہور سے تین ماہ کی کارکردگی کی رپورٹ طلب کی تھی جس کے بعد سی سی پی او عمر شیخ نے لاہور میں گیلپ سروے کروانے کا اعلان کر دیا تھا لیکن سروے سے قبل ہی انہیں عہدے سے ہاتھ دھونا پڑ گیا ۔

Leave a Reply