دنیا والے کورونا سے ڈر کر گھروں میں بیٹھے رہے، لیکن چین کے شہر ووہان میں نئے سال کا جشن کیسے منایا گیا؟ دیکھ کر آنکھوں میں آنسو آجائیں

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین کے شہر ووہان سے پھیلنے والی کورونا وائرس کی وباءنئے سال کی خوشیوں کو بھی کھا گئی اور بیشتر ممالک میں یہ ایونٹ بھی سماجی فاصلے کی پابندی اور لاک ڈاﺅن کی نذر ہو گیا تاہم چین کا شہر ووہان، جہاں سے یہ وائرس پھیلا تھا، میں نئے سال کا جشن کچھ ایسے دھوم دھڑکے سے منایا گیا کہ دیکھ کر باقی دنیا کے لوگوں کے آنکھیں نم ہو گئیں۔ میل آن لائن کے مطابق ووہان سے سامنے آنے والی تصاویر اور ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہر ہزاروں نہیں، لاکھوں لوگوں کے اجتماعات ہوئے اور آتش بازی کے شاندار مظاہرے کیے گئے۔

رپورٹ کے مطابق ان لوگوں نے یہ تو فیس ماسک پہن رکھے تھے اور نہ ہی ان اجتماعات میں سماجی فاصلے کی پابندی کا کوئی عمل دخل نظر آیا۔ انسانوں کا ایک سمندر تھا جو ووہان کی نئے سال کی تقاریب میں ٹھاٹھیں مار رہا تھا جبکہ باقی ممالک میں کورونا وائرس کی وجہ سے لوگ کم از کم 6فٹ کا فاصلہ رکھنے پر مجبور تھے۔ ووہان کی ان تصاویر اور ویڈیوز پر کمنٹس میں بیشتر لوگوں کا کہنا ہے کہ کاش وہ اس بار نئے سال پر ووہان میں ہی موجود ہوتے۔

Leave a Reply