اب پراپرٹی خریدنے یا بیچنے سے پہلے یہ خبر ضرور پڑھ لیں، ایف بی آر سب پر نظر رکھے گا

تان ٹوڈے کے مطابق ایف بی آر کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف)کی ہدایات پر پورا اترنے کے لیے پراپرٹی کے 20لاکھ یا ا س سے زائد مالیت کے سودوں کی ایف بی آر کو رپورٹ کرنا لازمی ہے۔یہ پابندی صرف ان سودوں کے لیے ہے جن میں ادائیگی کیش کی صورت میں کی جائے۔ جن سودوں میں ادائیگی بینک ٹرانزیکشن کے ذریعے ہو، انہیں ایف بی آر کو رپورٹ کرنے کی ضرورت نہیں ہو گی۔ ایف بی آر کے مطابق اس اقدام کا مقصد منی لانڈرنگ کو روکنا اور ایف اے ٹی ایف کی ہدایات پر پورا اترنا ہے۔ 

Leave a Reply