تحریک انصاف کے کارکن کا پاکستان کی پہلی خاتون ٹیکسی ڈرائیور پر تشدد، بازو توڑ دیا

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کی پہلی خاتون ٹیکسی ڈرائیور زاہدہ کاظمی نے الزام عائد کیا ہے کہ انہیں تحریک انصاف کے ایک کارکن نے تشدد کا نشانہ بنایا اور ان کا بازو توڑ دیا۔

زاہدہ کاظمی نے ایک ویڈیو پیغام میں بتایا کہ وہ اپنی بیٹی کے امتحان کیلئے ضروری سامان لینے کیلئے گھر سے نکلی تھیں۔ واپسی پر انہوں نے دیکھا کہ دو لوگ آپس میں جھگڑا کررہے ہیں۔ وہ ان کے پاس گئیں اور انہیں روکنے کی کوشش کی تو ان میں سے ایک شخص نے نہ صرف انہیں گالیاں دیں بلکہ تشدد کا بھی نشانہ بنایا۔

زاہدہ کاظمی کے مطابق اس شخص نے ان کا بازو مروڑ کر توڑ دیا اور ان پر مکوں کی بارش کردی۔ خاتون ٹیکسی ڈرائیور نے الزام عائد کیا کہ ان پر تشدد کرنے والے شخص کا تعلق حکمران جماعت تحریک انصاف سے ہے اور وہ اس معاملے میں انصاف چاہتی ہیں۔

خیال رہے کہ زاہدہ کاظمی 1987 سے ٹیکسی چلا رہی ہیں، انہیں پاکستان کی پہلی خاتون ٹیکسی ڈرائیور ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔

Leave a Reply