ہسپتال کی نرس کورونا وائرس کے مریض کے ساتھ انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑی گئی

جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) انڈونیشیاءمیں ایک نرس کورونا وائرس کے مریض کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑ گئی جس پر اسے نوکری سے نکال دیا گیا۔ ڈیلی سٹار کے مطابق یہ نرس ’ویسما ایٹلٹ‘ قرنطینہ مرکز میں ڈیوٹی پر تھی جہاں اس نے ایک مریض کے ساتھ تعلق قائم کر لیا۔ دونوں فون پر ایک دوسرے کو میسجز بھی کرتے رہے اور مرکز کے باتھ روم میں دونوں نے جنسی تعلق قائم کیا۔ 

اس مریض نے سوشل میڈیا پر نرس کے ساتھ ہونے والی چیٹنگ کے سکرین شاٹس اور اور کچھ تصویریں پوسٹ کیں۔ ان تصاویر میں نرس کے حفاظتی لباس کو باتھ روم کے فرش پر بکھرا دیکھا جا سکتا ہے۔ یہ تصاویر وائرل ہونے پر حکام نے اس نرس سے پوچھ گچھ کی اور معاملہ پولیس کے سپرد کر دیا۔ پولیس نے اس نرس اور مریض دونوں کو گرفتار کر لیا ہے۔ واضح رہے کہ انڈونیشیاءمیں اس طرح کا فحش مواد بنانے اور شیئرکرنے کے خلاف سخت قوانین بنائے گئے ہیں۔ اگر ان دونوں کا جرم ثابت ہو جاتا ہے تو انہیں 10سال تک قید کی سزا ہو سکتی ہے

Leave a Reply